مضامین و مقالات 

سچے اور پکے مسلمان بن جائیں

مسلمان وہ ہے جس کے زبان اور ہاتھ سے دوسرا مسلمان محفوظ رہے دل پر ہاتھ رکھ کر ہر نفس اپنے آپ سے سوال کرے کہ کون ہے جو ان اوصاف سے متصف ہے اور اگر یہ صفت ہمارے اندر نہیں ہے تو ہم اللہ کے محبوب بندے کیسے بنیں گے کیسے اللہ ہمیں روئے زمین کی خلافت عطا کرےگا اور کیسے ہمارے لئے باران رحمت برسے گی.

یہ ایک مسلمہ اصول ہے کہ اللہ کی رحمت سے محرومی بلائوں اور مصیبتوں کے نزول کا سبب بنتی ہے. یہی وجہ ہے کہ آج عالم انسانیت کرونا وائرس جیسی خطرناک بیماری کی سنگینیت سے جوجھ رہی ہے.


دنیا کی کوئی بھی مصیبت بلاوجہ نہیں ہوتی خدا کا فطری قانون ہے کہ جب کوئی انسان گناہوں کے دلدل میں پھنس جاتا ہے, صحیح اور غلط کی تمیز بھول جاتا ہے, برائیوں کو شیوہ زندگی بنالیتا ہے تو عذاب الہی ان کا مقدر بن جاتی ہے خالق کائنات یا تو مصائب کے ذریعہ انہیں متنبہ کرتا ہے یا عذاب الہی کی گرفت میں لےکر ہلاک و برباد کردیتا ہے. موجودہ پر آشوب دور ان باتوں کی عکاسی کررہا ہے.

آج عالم انسانیت مختلف مصائب و مسائل سے گھری ہے. ہرجگہ ہرگھڑی خوف کا سایہ منڈلارہا ہے. کوئی عالمی وبا سے پریشان ہے تو کوئی بھوک سے نڈھال, کوئی گھریلو پریشانی میں مبتلاء ہے تو کوئی ملکی استبداد کا شکار.

الغرض ہر کوئی اپنے اپنے مسائل سے دوچار ہیں. ان تمام مسائل و مصائب سے نکلنے کا واحد ذریعہ رجوع الی اللہ ہے اس لئے ہم تمام مسلانوں کو چاہئے کہ اللہ کی طرف رجوع کریں اور *یاایھا الزین آمنوا دخلو فی السلم کافہ* کی عملی مشق بن جائیں. ان شاءاللہ بہت جلد ہم سے مصائب کا خاتمہ ہوجائے گا.