Vizag Gas Leakخبریں 

آندھرا پردیش کیمیکل پلانٹ میں زہریلی گیس لیک ، 13 افراد ہلاک

آندھراپردیش کے وشاکھاپٹنم میں ایک ملٹی نیشنل کمپنی کے کیمیکل پلانٹ میں زہریلی گیس کے اخراج کے باعث ایک بچے سمیت 13 افراد ہلاک ہوگئے۔ اور 100 کے قریب لوگ بیمار ہوچکے ہیں.

یہ معلومات نیوز ایجنسی اے این آئی نے دی ہے۔ جمعرات کے صبح سے اس پلانٹ میں گیس کا اخراج ہو رہا ہے جس سے تقریبا 100 افراد کو اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ گاؤں آر آر وینکٹا پورم میں ایل جی پولیمر انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ کے کیمیکل گیس پلانٹ کے قریب رہائشیوں کو جلن اور سانس لینے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑارہا ہے۔ اسے فوری طور پر اسپتال منتقل کیا گیاہے۔


اے این آئی نے بتایا کہ واقعے کی اطلاع ملتے ہی کیمیکل پلانٹ پر ایمبولینسز ، فائر بریگیڈ اور پولیس اہلکار موقع پر پہنچ چکے ہیں۔

وشاکھاپٹنم میونسپل کارپوریشن نے شہریوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ اپنے اپنے گھروں میں ہی رہیں اور گیلے ماسک سے اپنے منہ اور ناک کو ڈھانپنے رکھیں۔

این ڈی آر ایف کے ڈائریکٹر جنرل ایس این پردھان نے بتایا کہ فورس کی خصوصی ٹیم موقع پر پہنچ چکی ہے اور لوگوں کو بےچینی کی شکایت دور کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

ٹی ڈی پی کے سربراہ این چندربابو نائیڈو نے جمعرات کے روز کہا کہ وہ وشاکھاپٹنم میں گیس کے اخراج کے واقعے سے خوفزدہ ہیں۔ انہوں نے شہر کے لوگوں سے ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی اپیل کی۔ نائیڈو نے ٹویٹ کیا کہ قائدین اور کارکنان ہر وقت لوگوں کی مدد کے لئے تیار رہیں۔


مرکزی وزیر کشن ریڈی نےاپنے ٹویٹ میں, آج صبح آندھرا پردیش کے ایک نجی فرم میں گیس کے اخراج کے باعث متاثرہ افراد کے کنبہ سے تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے آندھرا پردیش کے چیف سکریٹری اور ڈی جی پی سے بات کی۔اور این ڈی آر ایف کی ٹیموں کو ضروری امدادی اقدامات کی ہدایت دی گئی ہے۔ میں خود اس صورتحال کی مسلسل نگرانی کر رہا ہوں۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے آندھرا پردیش میں وشاکھاپٹنم کی صورتحال کے بارے میں وزیر اعلی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی سے بات کی۔ انہوں نے ہر ممکن مدد اور تعاون کا یقین دلایا۔